ہر گھر کے باہر قبر…یا الٰہی ماجرا کیا ہے؟

graveyard

نئی دہلی(خصوصی رپورٹ) بھارت میں‌طرح طرح کے عجوبے اور توہم پرستی پائی جاتی ہے. وہاں ایک گاؤں ایسا بھی موجود ہے جہاں آپ کو ہر گھر کے باہر قبریں نظر آئیں گی. لوگ گھر میں آتے جاتے وقت ان قبروں پر پوجا کرتے ہیں اور ہر روز گھر میں‌پکنے والے کھانے کا چڑھاوا چڑھاتے ہیں‌. اس کے پیچھے کارفرما عوامل پر ہم بات کرتے ہیں .مگر اس سے قبل یہ جان لیں کہ یہ قبریں اب اس گاؤں کی پہچان بن چکی ہیں.

بھارت میں بہت سے دیہات ایسے ہیں جہاں مردوں کو دفنانے کیلئے قبرستان تک موجود نہیں ہیں اور مردوں کو گھر کے باہر ہی دفنا دیا جاتا ہے۔ جنوبی بھارتی ریاست آندھرا پردیش میں ’کونڈا کرنول‘ نامی گاؤں ہے کے لوگ مرنے والے افراد کو اپنے گھر کے اطراف یا پھر صحن میں دفنا دیتے ہیں، جس کی وجہ سے اب تک سینکڑوں کی تعداد میں مردے دفنائے جاچکے ہیں۔
graveyard


بھارتی ریاست آندھرا پردیش میں واقع یہ گاؤں ضلع ہیڈ کوارٹر سے 66 کلو میٹر کے فاصلے پر گونے گنڈل تحصیل کی پہاڑی پر آباد ہے، جہاں ہر گھر کے باہر دو سے تین افراد مدفون ہیں، جن میں بچے اور عورتیں بھی شامل ہیں۔

اس گاؤں میں ’مالاداسری برادری‘ کے تقریباً 150 خاندان آباد ہیں، جو اپنے روز مرہ کی ضروریات کے حوالے سے گھر سے نکلتے ہیں تو اپنے عزیز واقارب کی قبروں سے ہوکر گزرتے ہیں، اور اپنے مذہبی روایات کے مطابق ان کی پوجا بھی کرتے ہیں۔

graveyard village

مقامی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گاؤں والوں کا کہنا تھا کہ یہ قبریں ان کے رشتہ داروں اور آباؤں اجداد کی ہیں جن کی وہ روزانہ پوجا کرتے ہیں، ان پر نذرانے چڑھاتے ہیں اور اپنے مخصوص رسم و رواج کی پابندی بھی کی جاتی ہے، علاوہ ازیں گھر کے افراد گھر میں پکنے والا کھانا اس وقت تک نہیں چھوتے جب تک انھیں پہلے قبر پر نذر نہیں کیا جاتا۔

خیال رہے کہ اس گاؤں میں لوگوں کو قبرستان کی سہولت موجود نہیں ہے، مقامی آباد کاروں نے حکومت سے مطالبہ بھی کیا ہے کہ اگر وہ انہیں قبرستان کے لیے ایک جگہ مختص کر دیں تو وہ اپنے عزیزوں کو گھر کے بجائے قبرستان میں دفنائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.