وفاقی وزیرداخلہ پر فائرنگ کےملزم کا اعتراف جرم، فائرنگ کی وجہ بھی بتادی

لاہور ( مانیٹرنگ ڈیسک ) وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال پر حملہ کرنے والے ملزم عابد نے پولیس کا ابتدائی بیان دے دیا جس میں اس نے کہا ہے کہ احسن اقبال کے ختم نبوت کے حوالے سے بیانات پر رنج تھا اس لیے حملہ کیا۔ نجی نیوز چینل کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے حملہ آور کو گرفتار کر کے نا معلوم مقام پر منتقل کردیا ہے جس سے ابتدائی تفتیش میں اس نے کہا کہ احسن اقبال نے ختم نبوت کے حوالے سے جو بیانات دئیے تھے اس پر رنج تھا اس وجہ سے احسن اقبال پر حملے کے لیے موقع کی تلاش میں تھا، آج جب احسن اقبال عیسائی کمیونٹی کی تقریب میں آئے تو موقع پا کر حملہ کردیا

ملزم کا ابتدائی بیان میں کہنا تھا کہ میں نے ختم نبوت کے معاملے پراحسن اقبال پرگولی چلائی، قاتلانہ حملے کا فیصلہ میرا ذاتی تھا، ذرائع کے مطابق پولیس نے ملزم کا ابتدائی بیان وزیراعلیٰ پنجاب کو بھجوادیا ۔

حملہ آور عابد حسین کی عمر21 سال اور اس کا تعلق اسی گاؤں کنجروڑ سے ہے جہاں وزیر داخلہ کارنر میٹنگ میں شریک تھے، ملزم کا تعلق ایک مذہبی تنظیم سے بتایا جارہا ہے۔

پولیس کے مطابق گرفتار ملزم عابد جلسہ گاہ میں موجود تھا اور خطاب کے وقت فرنٹ لائن میں بیٹھا تھا، پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم عابد سفید رنگ کے شلوار قمیض میں ملبوس تھا۔ ذرائع کے مطابق ملزم عابد حسین کے والد کا نام محمد حسین اور تاریخ پیدائش 13 مئی 1995 ہے جبکہ وہ دبئی بھی جاچکا ہے ، حملہ آور تحصیل شکر گڑھ کے علاقے ویرم کا رہائشی ہے۔

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: