قومی سلامتی کمیٹی میں پاکستان مخالف بیان مسترد، وزیراعظم نے نوازشریف کو مل کر صورتحال سےآگاہ کیا

اسلام آباد (پاک نیوز) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں نواز شریف کے ممبئی حملوں سے متعلق بیان پر غورکیا گیا۔ اجلاس میں آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ سمیت تینوں مسلح افواج کے سربراہان اورچیئرمین جائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی کے سربراہ، ڈی جی انٹرسروسزانٹیلی جنس (آئی ایس آئی) لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار، ڈی جی ملٹری آپریشنزمیجرجنرل ساحرشمشاد مرزا سمیت وزیردفاع انجینئرخرم دستگیر، مشیر قومی سلامتی ناصرجنجوعہ نے بھی شرکت کی۔ شرکا نے نواز شریف کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایسے بیانات سے گریز کرنا چاہیے۔ اجلاس کے بعد وزیراعظم عباسی نے نوازشریف سے ملاقات کی اور سکیورٹی اداروں کے تحفظات سے آگاہ کیا.

دریں اثناء وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنے قائد نوازشریف سے ملاقات کی جس میں ممبئی حملوں سے متعلق بیان پر بات چیت ہوئی،ملاقات میں شاہد خاقان عباسی نے قومی سلامتی کمیٹی اجلاس سے متعلق آگاہ کیا۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہناتھا کہ میرے بیان کو غلط رنگ دیا گیا ،ایسا کچھ نہیں کہا جس سے قومی سلامتی کو خطرہ ہو ۔

گزشتہ روز پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے ممبئی حملوں کے حوالے سے میڈیا پر چلنے والے بیان کو گمراہ کن قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس حوالے سے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بلایا گیا ہے جس میں معاملے پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ ایک انگریزی اخبارکوانٹرویو میں سابق وزیراعظم اورمسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد میاں نوازشریف نے کہا تھا کہ سرحد پار جا کر150 لوگوں کوقتل کردینا قابل قبول نہیں، عسکری تنظیمیں اب تک متحرک ہیں جنھیں غیرریاستی عناصرکہا جاتا ہے، مجھے سمجھائیں کہ کیا ہمیں انھیں اس بات کی اجازت دینی چاہیے کہ سرحد پار جا کر 150 لوگوں کوقتل کردیں۔

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: