حمام ………(کالم مبشر زیدی)

mubashar zaidi

ڈوڈو مجھے اپنے ساتھ کراکری کی دکان پر لے گیا۔
دکان دار چھ فٹ کا لمبا تڑنگا آدمی تھا۔
’’مجھے اپنی سیاسی سرائے کیلئے چمچوں کی ضرورت ہے۔‘‘
ڈوڈو نے بتایا۔
’’کتنے چمچے درکار ہیں؟‘‘
دکان دار نے پوچھا۔
’’دو درجن کافی ہوں گے۔
دس بارہ کڑچھے بھی۔
میں اپنی کچن کیبنٹ کیلئے کچھ اور برتن بھی لینا چاہتا ہوں۔
لیکن زیادہ کھڑکتے نہ ہوں۔‘‘
ڈوڈو نے فرمائش کی۔
’’اپنے حمام کے لئے چند نئے لوٹے بھی لے لو۔‘‘
میں نے تجویز دی۔
ڈوڈو نے ہنس کر کہا،
’’سیاسی حمام میں لوٹے ہمیشہ استعمال شدہ رکھے جاتے ہیں۔‘‘
(بشکریہ روزنامہ جنگ)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.